Prime Minister Imran Khan chaired a meeting on the development of New Balakot City as a tourist hub.

October 20, 2021

Prime Minister Imran Khan chaired a meeting on the development of New Balakot City as a tourist hub.

 

The Prime Minister said,” The Government wants to develop new tourist resorts in hilly areas for the promotion of tourism in the country.”

 

“For this purpose, reputed private investors in the field of tourism and hospitality are being attracted on Public Private Partnership (PPP) mode,” he added.

 

The Prime Minister   directed the Federal and Provincial authorities concerned to take all necessary measures to fully facilitate private investors in this regard.

 

He further directed KPK Government to take over the entire project from ERRA and accomplish it as a tourist resort. The Prime Minister further directed to exclude irrigated land from the project in order to ensure food security in the region.

 

Earlier the Prime Minister was briefed that feasibility study on a Rs. 19.5 Billion project for the development of New Balakot City as a tourist hub on Design-Build-Finance-Operate and Transfer (DBFOT) mode has been completed by NESPAK and KPMG. 63% residential plots out of the total 6753 under the proposed project are reserved for allotment to the local affectes, whereas remaining 2480 residential and 575 commercial plots besides 800 apartments would be auctioned to generate finances for the execution of the project.

 

The Prime Minister  was informed that primarily it was the responsibility of Provincial Government of KPK instead of the Federal Government to develop New Balakot City. KPK Government has already acquired land for the purpose. To be executed under Public Private Partnership (PPP), the tourist resort will include youth hostel, theme park, camping ground and a 3-Star hotel.

 

The project, when completed will not only ease pressure on existing overloaded tourist destinations but would also earn more than Rs 7 Billion as a result of expected revenue sharing with the Government.

 

The meeting was attended by Railways Minister Azam Khan Swati, Chief Minister KPK Mahmood Khan, MNA Saleh Swati, KPK Population Minister Syed Ahmed Hussain Shah,  Chairman NDMA Lt Gen Akhtar Nawaz Satti and senior officers concerned.

 

اسلام آباد: 20 اکتوبر ، 2021۔

 

وزیراعظم عمران خان نے نیو بالاکوٹ سٹی کو سیاحتی مرکز کے طور پر ترقی دینے کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کی۔

 

حکومت ملک میں سیاحت کے فروغ کے لیے پہاڑی علاقوں میں نئے سیاحتی مقامات تعمیر کر رہی ہے۔ وزیر اعظم

 

اس مقصد کے لیے سیاحت اور مہمان نوازی کے شعبے میں نامور نجی سرمایہ کاروں کو پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی) موڈ پر راغب کیا جا رہا ہے۔ وزیر اعظم

 

وزیراعظم نے متعلقہ وفاقی اور صوبائی حکام کو ہدایت کی کہ وہ اس سلسلے میں نجی سرمایہ کاروں کو مکمل سہولت فراہم کرنے کے لیے تمام ضروری اقدامات کریں۔

 

انہوں نے کے پی کے حکومت کوہدایت کی کہ وہ منصوبے کو ایرا سے لے کر اسے ایک سیاحتی مقام کے طور پر مکمل کرے۔

 

وزیر اعظم نے مزید ہدایت کی کہ خطے میں غذائی تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے زیر کاشت اراضی کو منصوبے میں شامل نہ کیا جاۓ۔

 

اس سے قبل وزیراعظم کو بتایا گیا کہ نیو بالاکوٹ سٹی کو ڈیزائن-بلڈ-فنانس-آپریٹ اینڈ ٹرانسفر (DBFOT) موڈ پر سیاحتی مرکز کے طور پر ترقی دینے کے 19.5 بلین روپے کے منصوبے کی فزیبلٹی سٹڈی (Feasibility Study) NESPAK اور KPMG نے مکمل کر لی ہے۔مجوزہ پروجیکٹ کے تحت کل 6753 میں سے 63 فیصد رہائشی پلاٹ مقامی متاثرین کو الاٹمنٹ کے لیے مختص ہیں ، جبکہ باقی 2480 رہائشی اور 575 کمرشل پلاٹس کے علاوہ 800 اپارٹمنٹس نیلام کیے جائیں گے تاکہ اس منصوبے پر عملدرآمد کے لیے فنڈزحاصل کیے جا سکیں۔

 

وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ بنیادی طور پر نیو بالاکوٹ سٹی کی ترقی وفاقی حکومت کے بجائے کے پی کے کی صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ کے پی کے حکومت پہلے ہی اس مقصد کے لیے زمین حاصل کر چکی ہے۔ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی) کے تحت مکمل کیے جانے والے اس منصوبے میں یوتھ ہاسٹل ، تھیم پارک ، کیمپنگ گراؤنڈ اور تھری اسٹار ہوٹل شامل ہوں گے۔

 

یہ منصوبہ مکمل ہونے پر نہ صرف موجودہ سیاحتی مقامات پر دباؤ کو کم کرے گا بلکہ حکومت کے ساتھ متوقع آمدنی بانٹنے کے نتیجے میں 7 بلین روپے سے زیادہ رقم بھی کمائے گا۔