معیاری سڑکوں کی تعمیر سے دیہی اور شہری علاقوں کے درمیان رابطہ، تجارت اور روزگار کے مواقع بڑھیں گے۔ وزیر اعظم

September 22, 2021

 

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے زیر انتظام منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ اجلاس

 

اجلاس میں وفاقی وزیرمواصلات مراد سید، وزیرمنصوبہ بندی اسد عمر، معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل، ڈپٹی چیرمین منصوبہ بندی کمیشن جہانزیب خان، چیرمین نیشنل ہائی وے اتھارٹی اور سینیر افسران شریک۔

 

 

 

وفاقی وزیرمواصلات مراد سید نے اجلاس کو تقابلی جائزہ پیش کرتےہوئے آگاہ کیا کے پچھلی دور حکومت کے تین سالوں (16-2013) میں صرف 645 کلومیٹر کی سڑکیں تعمیر ہویئں اور موجودہ حکومت کے تین سالوں میں کل 1753 کلومیٹر لمبائی کی سڑکیں مکمل ہو چکی ہیں۔

 

منصوبہ بندی کے حوالے سے پچھلی دور حکومت کے تین سالوں میں صرف 858 کلو میٹر جبکہ موجودہ حکومت کے تین سالوں میں 6118 کلومیٹر لمبائی پر مشتمل سڑکوں کی منصوبہ بندی مکمل کر لی گئی ہے۔ اس مالی سال میں نیشنل ہائی وے اتھارٹی 27 منصوبے مکمل کر لے گی۔ صوبہ بلوچستان میں 3000 کلومیٹر سے زیادہ کی سڑکیں تعمیر کی جارہی ہیں. وزیر اعظم کے خود انحصاری کے ویژن کے مطابق منصوبے قرضوں کی بجائے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے ذریعے مکمل کئے جارہے ہیں. اجلاس کو بریفنگ

 

اجلاس کو راولپنڈی تا کھاریاں، میانوالی تا مظفرگڑھ اور حیدرآباد تا سکھر شہراہوں پر پیشرفت کی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

 

 

 

وزیر اعظم نے کہا کے معاشی ترقی میں سڑکوں کا اہم ترین کردار ہے۔

 

معیاری سڑکوں کی تعمیر سے دیہی اور شہری علاقوں کے درمیان رابطہ، تجارت اور روزگار کے مواقع بڑھیں گے۔ وزیر اعظم

 

اچھی سڑکوں کی وجہ سے گاڑیوں کی مرمت اور پیٹرولیم مصنوعات کی درآمد کے اخراجات بھی کم ہو جا ئں گے۔ وزیر اعظم

 

مواصلات کے اہم اور بڑے منصوبوں پر روزانہ کی بنیاد پر پیشرفت کا خود جا ئزہ لوں گا۔ وزیر اعظم

 

منصوبوں کی بر وقت تکمیل کے لیے فنڈز کا اجرا یقینی بنایا جائے۔ وزیر اعظم کی ہدایت