وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت حکومتی معاشی ٹیم کا اجلاس

December 12, 2020

اجلاس میں وفاقی وزیرِ خزانہ عبدالحفیظ شیخ، مشیران عبدالرزاق داؤد، ڈاکٹر عشرت حسین، معاونینِ خصوصی ندیم بابر اور وقار مسعود کے علاوہ متعلقہ اعلی افسران نے شرکت کی

 

اجلاس میں وزیرِ اعظم کو ملک کی بہتر ہوتی  ہوئی معاشی صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی گئی.

 

 وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ رواں مالی سال پرائمری بیلنس میں سرپلس، ایف بی آر کی محصولات میں 5 فی صد اضافہ، کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس 1.2 ارب ڈالر، بیرونِ ملک سے ترسیلات میں 27 فی صد اضافہ، براہِ راست بیرونی سرمایہ کاری میں 9.1 فی صد اضافہ،  اسٹیٹ بنک کے ذخائر 13.4 ارب ڈالر اور خاص طور پر بڑے پیمانے کی صنعت، آٹو انڈسٹری اور فرٹیلائیزر انڈسٹری کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے. 

  

مزید یہ کہ پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی کی بدولت کرونا وباء کی پہلی لہر میں پاکستان کو باقی دنیا کی نسبت کم نقصان کا سامنا رہا جسکی پوری دنیا پذیرائے کر رہی ہے

 

وزیرِ اعظم عمران خان نے اس بات پر زور دیا کہ معاشی استحکام کے ثمرات کو جلد عام آدمی تک پہچانے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں