وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیا ئے ضروریہ کی قیمتوں اور دستیابی کے حوالے سے اعلی سطح اجلاس

October 27, 2020

جلاس میں وفاقی وزراء، مشیران، معاونین خصوصی اور سینئیر افسران شریک۔

 

معاون خصوصی برائے امور نوجوانان عثمان ڈار نے ٹائیگر فورس کی جانب سے بنیادی اشیا ئے ضروریہ کی قیمتوں  اور دستیابی کے حوالے سے زمینی حقائق پر مبنی مفصل رپورٹ پیش کی۔

 

اجلاس کو  ملک میں زراعت کے فروغ اور روزمرہ استعمال کی اشیائے کی دستیابی کو یقینی بنانے کے حوالے سے مختلف تجاویز پیش کی گئیں-

 

 وزیر اعظم نے کہا کہ اشیائے ضروریہ  کی طلب و رسد  اور تخمینوں کو سامنے رکھتے ہوئے مستقبل کے لیے سفارشات پیش کی جائیں تاکہ بنیادی اشیائے ضروریہ کے حوالے سے  آئندہ کسی قسم کے کمی کا سامنا نہ ہو۔ اس حوالے سے  وزیراعظم نے  تمام متعلقہ وزارتوں کو وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی کو متعلقہ وزارتوں کے ساتھ مل کر ایک جامع پلان مرتب کرنے کی ہدایت کی-. 

 

اجلاس کو بتایا گیا کہ صوبہ پنجاب نے اکتوبر کے مہینے میں 25000 میٹرک ٹن کی گندم ریلیز کر دی ہے جس سے قیمتوں میں استحکام آیاہے

 

وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ فلور ملوں کو جاری کردہ گندم ذخیرہ اندوزی کی نذر نہ ہو- انہوں نے کہا کہ روزمرہ استعمال کی اشیاء کی مناسب قیمتوں  پر دستیابی حکومت کی اولین ترجیح ہے . وزیراعظم نے صوبہ سندھ کی طرف سے فلور ملز کو گندم جاری کرنے کے عمل میں تیزی لانے اور ماہانہ ریلیز کو 8000ہزار میٹرک ٹن تک لے جانے پر زور دیا

 

وزیر اعظم نے حکومت پنجاب کو یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن کو ضرورت کے مطابق آٹا دستیابی کو یقینی بنانے کی ہدایت کی.  

 

اس موقع پر وزیراعظم نے ہدایت جاری کی کہ گندم کی ملک بھر میں آسان ترسیل کو یقینی بنانے کیلئے وزارت ریلوے کے ساتھ ملکر کارگو ٹرین سروس سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کیا جائے

 

وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار حماد اظہر نے میٹنگ کو بتایا کہ چینی کی پہلی کھیپ آج پاکستان میں پہنچ جاۓ گی جس کی ملک بھر میں بروقت ترسیل کیلئے تمام اقدامات اٹھائے گئے ہیں