Prime Minister Imran Khan chaired a review meeting on commodity prices.

July 26, 2021

 The meeting was attended by Minister for Planning Asad Umar, Minister for Industries and Production Makhdoom Khusro Bakhtiar, Minister of State for Information and Broadcasting Farrukh Habib, SAPM on Political Communication Dr Shahbaz Gill and senior officers concerned. Finance Minister Shaukat Tareen, Chief Secretary Punjab and Balochistan attended the meeting via video link.

In the meeting, the Prime Minister stressed that the provision of essential commodities to people at affordable prices is top priority of the Government.

The Prime Minister directed that Tehsil and District Administration along with Competition Commission of Pakistan should ensure fair prices of food items by taking action against profiteers and mafias to facilitate people.

The Prime Minister directed the provincial Chief Secretaries to ensure action against the negligent officers regarding prices.

The Prime Minister also stressed upon the need to make the existing cell more active in monitoring prices on a regular basis and ensuring their reasonable prices.


 

 

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کا جائزہ اجلاس ۔

 اجلاس میں وزیر  منصوبہ بندی اسد عمر، وزیر صنعت و پیداوار مخدوم خسرو بختیار، وزیر مملکت براے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب ، معاون خصوصی برائے سیاسی مواصلات ڈاکٹر شہباز گل اور متعلقہ اعلی افسران کی شرکت۔  وزیر خزانہ شوکت ترین ،چیف سیکرٹری پنجاب اور بلوچستان ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک ہوئے۔

اجلاس میں وزیر اعظم نے اس بات پر زور دیا کہ عوام کو اشیائے ضروریہ کی مناسب قیمت پر فراہمی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

وزیرِ اعظم نے ہدایت کی کہ تحصیل و ضلعی انتظامیہ اور مسابقتی کمیشن  کے ذریعے   اشیائے خوردو نوش کی مناسب قیمتوں کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ منافع خوروں اور مافیا کے خلاف بھرپور کاروائی  کو یقینی بنایا جائے اور عوام کو سہولت فراہم کی جائے۔

وزیرِ اعظم نے چیف سیکرٹری صاحبان کو ہدایت کی کہ قیمتوں کے حوالے سے   غفلت کے مرتکب افسران کے خلاف کاروائ کو یقینی بنایا جائے 

وزیر اعظم نے قیمتوں کی مستقل بنیادوں پر نگرانی اور مناسب قیمتوں کو یقینی بنانے کے حوالے سے  قائم سیل کو مزید فعال بنانے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔