وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت صوبہ خیبرپختونخواہ خصوصاً انضمام شدہ علاقوں اور صوبہ پنجاب کے ترقیاتی ضرورتوں کے حوالے سے اعلیٰ سطح کا اجلاس

October 14, 2020

اسلام آباد،14اکتوبر2020

وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت صوبہ خیبرپختونخواہ  خصوصاً انضمام شدہ علاقوں  اور صوبہ پنجاب کے ترقیاتی ضرورتوں  کے حوالے سے اعلیٰ سطح کا اجلاس

 

اجلاس میں وفاقی وزراء اسد عمر، فواد احمد چوہدری، عمر ایوب خان، مشیرخزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، وزیرِ اعلیٰ خیبرپختونخواہ محمود خان،  وزیرِ خزانہ کے پی تیمور سلیم جھگڑا  و دیگر سینئر افسران کی شرکت ۔ وزیرِ اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار ، وزیرِ خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جوان بخت، چیف سیکرٹری پنجاب نے بھی ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شرکت کی۔  

 

اجلاس میں  انضمام شدہ علاقوں  اور صوبہ پنجاب کی ترقیاتی ضرورتوں اور صوبائی مالیاتی ایوارڈ کے معاملے پر تفصیلی گفتگو

 

وزیرِ اعظم عمران خان  نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت انضمام شدہ علاقوں کی بلا تعطل تعمیر و ترقی کے لئے پرعزم ہے ۔ وزیرِ اعظم نے انضمام شدہ علاقوں کے لئے تمام ضروری  مالی وسائل فراہم کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ 

 

وزیرِ اعظم نے  صوبائی مالیاتی ایوارڈ کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ صوبوں کے محاصل اور آمدن کی ضلعی سطح پر شفاف اور منصفانہ تقسیم صوبوں میں یکساں تعمیر و ترقی کے عمل کے لئے از حد ضروری ہے ۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ ماضی کی حکومتوں میں وسائل کا بڑا حصہ سیاسی ترجیحات کو مد نظر رکھتے ہوئے محض چند علاقوں تک محدود کر دیا جاتا تھا جس سے پس ماندہ علاقوں میں تعمیرو ترقی کا عمل متاثر ہوا اور ان علاقوں کی عوام میں احساسِ محرومی نے جنم لیا۔ وزیرِ اعظم نے   کہا کہ صوبائی سطح پر  اضلاع میں مالی وسائل کی منصفانہ تقسیم  موجودہ حکومت کی اہم ترجیحات میں شامل ہے۔  

 

وزیرِ اعظم نے صوبائی حکومتوں پر زور دیا کہ محصولات کے حوالے سے اضلاع  اور مقامی حکومتوں کو بااختیار بنانے پر خصوصی توجہ دی جائے تاکہ ان علاقوں سے حاصل ہونے والے وسائل کو انہیں علاقوں کی  تعمیر و ترقی اور سہولیات کی بہتری کے لئے بہتر طریقے سے برؤے کار لایا  جا سکے۔ 

 

وزیرِ اعظم نے صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی کہ صوبائی سطح پر آمدن بڑھانے کے لئے آؤٹ آف باکس سلوشنز پر غور کیا جائے۔ اس ضمن میں سرکاری املاک کو برؤے کار لا کر مالی وسائل پیدا کرنے پر خصوصی توجہ دی جائے تاکہ کوروناکی وجہ سے  متاثر ہونے والی سرکاری آمدن کا ازالہ کرنے کے لئے مزید وسائل پیدا کیے جا سکیں اور ان کو عوام  کی فلاح و بہبود پر خرچ کیا جا سکے۔ 

 

اجلاس میں  صوبہ پنجاب اور صوبہ خیبر پختونخواہ  کو واجب الادا نیٹ ہائیڈل پرافٹس کے معاملے پر بھی غور کیا گیا اور اس معاملے کے حل کے لئے ورکنگ گروپ تشکیل دے دیا گیا  ہے تاکہ اس معاملے کو احسن طور پر حل کیا جا سکے۔ 

 

وزیر اعظم نے صوبائی مالیاتی ایوارڈ اور نیٹ ہائیڈل پرافٹس کے معاملے کے حل کے  حوالے سے وزارتِ منصوبہ بندی کی کاوشوں کو سراہا۔