Prime Minister Imran Khan chaired a meeting on the progress of the Agri Dashboard and the Monitoring Dashboard of projects and agreements signed during Prime Minister's visits abroad.

July 08, 2021

The meeting was attended by Federal Minister for Food Security Syed Fakhr Imam, National Security Advisor Dr Moeed Yousaf, SAPM Jamshed Iqbal Cheema, SAPM Dr Shahbaz Gill and concerned officials.

 

 

 Under the Prime Minister's vision of focusing on food security, with real time statistics of demand and consumption the Agri-Dashboard  for agricultural commodities will help the government identify and avoid any food crises in a timely manner. With the support of the provincial governments, the Agri Dashboard will also ensure controlling the prices of food consumables.  The Prime Minister directed to complete the final stages of the AgriDash Board on priority basis within the stipulated time and make it fully operational as soon as possible.  The meeting was also briefed on the steps taken to improve the genetic diversity of livestock.

 

 In addition, Dr. Moeed Yousuf briefed the meeting about the Prime Minister's visits abroad and the dashboard set up to monitor the implementation of agreements reached with foreign leaders in Pakistan.  The Dashboard will not only keep track of the details of the Prime Minister's visits, but will also assist in monitoring the implementation of agreements and decisions.  The dashboard will also ensure speedy implementation of agreements by removing barriers faced by ministries.

 

 

 The Prime Minister said that food security was the top priority of the government. The government is bringing innovation in this sector to increase agricultural yield.  The Agricultural Transformation Plan is a comprehensive strategy to increase production to meet the food needs of the country.  Increasing milk and meat production will bring down their prices.  The Prime Minister further said that obstacles to timely implementation of agreements reached during overseas visits would be identified and remedied so that there would be no delay in completion of projects which are important in the national interest.

 

 

وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت ایگری ڈیش بورڈ پر پیش رفت اور بیرونِ ملک دوروں کے دوران دستخط شدہ منصوبوں و معاہدوں کے مانیٹرنگ ڈیش بورڈ پر اجلاس

 

اجلاس میں وفاقی وزیر غذائی تحفظ سید فخر امام، مشیر قومی سلامتی ڈاکٹر معید یوسف، معاونِ خصوصی جمشید اقبال چیمہ، معاونِ خصوصی ڈاکٹر شہباز گل اور متعلقہ افسران کی شرکت

 

 

وزیرِ اعظم کے غذائی تحفظ پر خصوصی توجہ کے ویژن کے تحت ایگری ڈیش بورڈ سے زرعی اجناس کی طلب و کھپت کے اعداد و شمار حکومت کو کسی بھی طرح کے غذائی بحرانوں کی بروقت نشاندہی اور ان سے بچنے میں معاون ثابت ہونگے. صوبائی حکومتوں کی معاونت سے ایگری ڈیش بورڈ اشیاءِ خوردنوش کی قیمتوں کو بڑھنے سے روکنے کو یقینی بنائے گا. وزیرِ اعظم نے ایگری ڈیش بورڈ کے حتمی مراحل کو ترجیحی بنیادوں پر مقررہ مدت میں مکمل کرنے اور اسے جلد مکمل فعال بنانے کی ہدایات جاری کیں. اسکے علاوہ اجلاس کو لائیوسٹاک کی جینیاتی تنوع میں بہتری کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات سے بھی آگاہ کیا گیا

 

اسکے علاوہ ڈاکٹر معید یوسف نے وزیرِ اعظم کے بیرونِ ملک دوروں اور پاکستان میں بیرونِ ملک سے آئے سربراہان سے کئے گئے معاہدوں پر عملدرآمد کی نگرانی کیلئے بنائے گئے ڈیش بورڈ کے حوالے سے بریفنگ دی. ڈیش بورڈ نہ صرف وزیرِ اعظم کے دوروں کی تفصیلات کا ریکارڈ رکھے گا بلکہ معاہدوں پر عملدرآمد اور فیصلوں کی بھی نگرانی میں معاون ثابت ہوگا. ڈیش بورڈ وزراتوں کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرکے معاہدوں پر عملدرآمد کی رفتار بڑھانے کو بھی یقینی بنائے گا

 

 

وزیرِ اعظم نے اس موقع پر کہا کہ غذائی تحفظ حکومت کی اولین ترجیح ہے. زرعی پیداوار کو بڑھانے کیلئے اس شعبے میں جدت لارہے ہیں. ایگریکلچرل ٹرانفارمیشن پلان ایک جامع حکمتِ عملی کے تحت ملک کی غذائی ضروریات کو پورا   کرنے کیلئے پیداوار کو بڑھایا جائے گا. دودھ اور گوشت کی پیداوار بڑھنے سے قیمتوں میں کمی آئے گی. مزید وزیرِ اعظم نے کہا کہ بیرونِ ملک دوروں کے دوران کئے گئے معاہدوں پر بر وقت عمل کیلئے رکاوٹوں کی نشاندہی کرکے ان کا تدارک کیا جائے گا تاکہ ایسے منصوبے جو ملکی مفاد کیلئے اہم ہیں ان کی تکمیل میں کسی قسم کی تاخیر نہ ہو.