CPC and World Political Parties Summit

July 06, 2021

For the People’s Well-being: the Responsibility of Political Parties

(6 July 2021) 

 

Statement of the Prime Minister of Pakistan

 

His Excellency Mr. Xi Jinping,

General Secretary of the Central Committee of the Communist Party, President of the People’s Republic of China,

Distinguished Leaders,

Representatives of the Political Parties,

Excellencies,

Ladies and Gentlemen,

 

            It is a great privilege to share my thoughts today at this ‘CPC and World Political Parties Summit.’

 

            On behalf of the Government and people of Pakistan, I would like to convey our heartfelt felicitations to His Excellency President Xi Jinpingand the Chinese people on the 100th anniversary of the Communist Party of China. 

 

            I am confident that our discourse in this Summit would shed new light on the role of political parties in advancing the well-being of people. 

 

Founding of the CPC in 1921 was a seminal event in world history. 

 

            The vision of the CPC leadership ignited the spirit of the Chinese Nation and encouraged them to wage an epic struggle for liberation from foreign occupation. 

 

Chairman Mao Zedong, and subsequently Deng Xiaoping, guided the Chinese people in reclaiming national dignity, self pride, self respect and China’s rightful place in the world.  

           

For decades, the CPC’s spirit instilled new vigor and hope beyond China’s borders. It inspired peoples of colonized nations and contributed to the end of colonialism.

 

            CPC’s astonishing success rests in the people-centric approach of its inclusive development philosophy. 

 

It remained committed to serve the people and prioritize their well-being and interests.CPC’s achievements of all-round national development, poverty alleviation, anti-corruption campaign, and nation-building, are truly remarkable. It is something we hope to emulate in Pakistan.

 

Excellencies,

 

            CPC’s achievements have opened new vistas of thought for political parties across the world. 

           

            CPC has proven that attainment of political power is primarily meant for bringing a transformation in the lives of people and making them masters of their own destiny.

 

            Indeed, political parties can only enjoy public support and legitimacy if they continue to serve the people selflessly. 

 

            President Xi’s visionaryleadership has played a pivotal role in China’s transformation and continued rise. 

 

His people-centric philosophy has made a critical difference as China has eliminated extreme poverty, one of the greatest achievements in the history of mankind, and achieved CPC's goal of building a ‘moderately prosperous society'. 

 

Pakistan supports China’s efforts to safeguard world peace, contribute to global development, and preserve international order. 

 

            President Xi’s vision of shared prosperity, through BRI, has made a major impact on global sustainable development, thus proving his credentials as a world statesman. 

 

Under President Xi’s stewardship, China has achieved major success in the ‘people’s war’ against the COVID-19 pandemic. 

 

President Xi’s declaration of making the COVID-19 vaccines a global public good is reflective of his compassion and fairness.

 

Excellencies,

 

            CPC’s mission of ‘Great Rejuvenation of the Chinese nation’ and PTI’s vision of ‘Naya Pakistan’ reflect the respective aspirations of the people of our two countries. 

 

I formed the Pakistan Tehreek-e-Insaaf 25 years ago on the principles of accountability, transparency, meritocracy and Islamic Welfare to break the vicious cycle of elite capture, corruption and nepotism.

 

            Pakistan Tehreek-e-Insaaf remains committed to its original mission of establishing rule of law and setting up a society that is humane and compassionate.

 

            Today, the Ehsaas Program launched by PTI government last year, is one of the leading social protection programmes in Asia. In its second phase, we envisage to provide social protection to 8 million of our poorest citizens.

 

            We have made Universal Health Coverage a priority in our health sector reforms. Under the ‘EhsaasSahulat’ program we aim to provide free of cost health insurance initially to the families living below the poverty line, and subsequently to families that are in the provinces governed by PTI. 

 

            Our 10 Billion Tree Tsunami project reflects our commitment to countering environmental degradation and reversing biodiversity loss. We are ready to contribute more than our share to protect this invaluable planet and help it heal from centuries of neglect.

 

            In the wake of emerging global and regional environment, Pakistan has recalibrated its priorities from geo-politics to geo-economics. 

 

            China-Pakistan Economic Corridor (CPEC), the flagship project of BRI, complements Pakistan’s renewed efforts of this geo-economic shift with emphasis on economic integration and regional connectivity.

 

            Moreover, in line with my government’s Green Vision, which aligns perfectly with President Xi’s vision for green China, turning CPEC into green CPEC is a priority for Pakistan.

 

            Our abiding friendship with China and the CPEC complement this vision of peace for ourselves and for others, and shared prosperity and common development for our region and the world.

 

            Pakistan and China are ‘iron brothers.’We support each other on issues of our respective core interests.

 

In an era of complex and profound changes at global and regional level,our ‘All Weather Strategic Cooperative Partnership’ remains a strong anchor for peace, progress and prosperity. 

 

            This year also marks the 70th anniversary of establishment of diplomatic relations between Pakistan and China. Our two nations are celebrating this historic milestone in a befitting manner. I am confident that the year 2021 would provide new vigor and vitality to our time-tested friendship.

 

Excellencies,

 

            We must join hands to advance the noble cause of peace and development, welfare of our peoples, and building ‘Community of Shared Future for All Mankind.’ 

 

I thank you.

 

 

سی پی سی اور عالمی سیاسی جماعتوں کا سربراہی اجلاس

عوام کی خوشحالی کے لئے : سیاسی جماعتوں کی ذمہ داری

6 جولائی  2021 

وزیر اعظم پاکستان کا بیان

عزت مآب جناب شی جن پنگ

کمیونسٹ پارٹی کی سینٹرل کمیٹی کے جنرل سیکرٹری ، صدر عوامی جمہوریہ چین 

قابل قدر مہمانان گرامی

سیاسی جماعتوں کے نمائندگان 

معزز خواتین و حضرات 

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا اور عالمی سیاسی جماعتوں کے سربراہی اجلاس سے آج یہ خطاب میرے لئے باعث اعزاز ہے۔ 

 

میں پاکستان کی حکومت اور عوام کی طرف سے عزت مآب صدر شی جن پنگ اور چینی عوام  کو  کمیونسٹ پارٹی آف چائنا  کے 100 ویں یوم تاسیس پر دلی مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔

 

مجھے یقین ہے کہ اس سربراہی اجلاس کے موقع پر کیا جانے والا تبادلہ خیال عوام کی خوشحالی کے  حوالہ سے پیش رفت میں سیاسی جماعتوں کے کردار پر نئی روشنی ڈالے گا۔

 

1921 میں کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کا قیام عالمی تاریخ میں انتہائی دو رس اثرات کا حامل واقعہ تھا۔

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کی قیادت کے وژن نے چینی قوم کے جذبوں کو جلا بخشی اور انہیں غیر ملکی تسلط سے آزادی حاصل کرنے کی دلیرانہ جدوجہد شروع کرنے کا حوصلہ دیا۔

 

چیئرمین مائوزے تنگ اور بعد ازاں ڈینگ شیائو فینگ نے قومی وقار، خودداری اور عزت نفس  کی بحالی اور دنیا میں چین کے لئے اس کا جائز مقام حاصل کرنے کی جدو جہد میں چینی عوام کی راہنمائی کی۔ 

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا عشروں سے چین کی سرحدوں سے باہر بھی لوگوں کو نیا جذبہ اور امید دے رہی ہے۔ اس نے نو آبادیاتی نظام میں جکڑی اقوام کو آزادی کی جدوجہد کا حوصلہ دیا اور اس طرح نوآبادیاتی نظام کے خاتمہ میں اپنا کردار ادا کیا۔          

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کی حیرت انگیز کامیابی کا راز اس کے مجموعی  ترقی کے فلسفے میں مضمر ہے۔

 

یہ جماعت عوام کی خدمت اور ان کی خوشحالی اور مفادات کو ترجیح دینے کے اپنے عزم پر کاربند رہی ہے۔ ہمہ پہلو قومی ترقی، تخفیف غربت، انسداد بدعنوانی مہمات اور قومی تعمیر میں کمیونسٹ پارٹی آف چائنا نے شاندار کامیابیاں حاصل کی ہیں جن کی ہم پاکستان میں تقلید کی امید کرتے ہیں

 

 

 

 مہمانان گرامی   

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا کی کامیابیوں نے دنیا بھر میں سیاسی جماعتوں کے لئے سوچ کے نئے در وا کئے ہیں۔

 

کمیونسٹ پارٹی آف چائنا نے یہ ثابت کیا ہے کہ سیاسی طاقت کے حصول کا بنیادی مقصد عوام کی زندگیوں میں تبدیلی لانا اور انہیں اپنی قسمت کا خود مالک بنانا ہے۔

           

حقیقت یہی ہے کہ سیاسی جماعتیں اسی صورت عوامی حمایت حاصل کرسکتی ہیں کہ وہ عوام کی بے لوث خدمت کرتی رہیں۔

 

صدر شی جن پنگ کی بصیرت افروز قیادت نے چین میں تبدیلی اور اس کی مسلسل ترقی میں بنیادی کردار ادا کیا ہے۔

 

ان کے عوام درست فلسفہ نے اہم فرق ڈالا ہے جیساکہ چین نے انتہائی غربت کا خاتمہ کیا ہے جو کہ انسانی تاریخ کی سب سے بڑی کامیابیوں میں سے ایک ہے اور اعتدال پسندخوشحال معاشرے کی تشکیل کی منزل حاصل کی۔

 

پاکستان عالمی امن  کے تحفظ ، عالمی ترقی میں معاون کردار اور بین الاقوامی نظام برقرار رکھنے کیلئے چین کی کاوشوں کی حمایت کرتا ہے۔

 

صدر شی جن پنگ کے ''بیلٹ اینڈ روڈ انیشیٹیو'' کے ذریعے مشترکہ خوشحالی کے وژن کا عالمی پائیدار ترقی پر دوررس اثر پڑا ہے اور اس طرح اپنے اقدامات کی بدولت وہ عالمی سطح کے مدبر سیاستدان ثابت ہوئے ہیں۔

 

 چین نے صدر شی کی قیادت میں کوویڈ۔19  کی وبا کے خلاف عوامی جدوجہد میں بڑی کامیابی حاصل کی۔

 

صدر شی کا عالمی عوامی بھلائی کیلئے کوویڈ۔19  کی ویکسینز بنانے کا اعلان ان کے جذبہ ہمدردی اور دیانت داری کا عکاس ہے۔

 

معزز خواتین وحضرات

 

سی پی سی کا چینی قوم کو عظیم سے عظیم تر بنانے کا مشن اور پی ٹی آئی کا ''نیا پاکستان'' وژن  دونوں ممالک کے عوام کی با وقارامنگوں کا آئینہ دار ہے۔

 

 

 

اشرافیہ کے تسلط ، بدعنوانی اور اقربا پروری کو ختم کرنے کیلئے میں نے احتساب ، شفافیت ، میرٹ کی بالادستی اور اسلامی فلاح وبہبود  کے سنہری اصولوں پر 25 سال پہلے پاکستان تحریک انصاف  تشکیل دی۔ 

 

پاکستان تحریک انصاف ملک میں قانون کی بالادستی ، اور ایسے معاشرے کے قیام جو کہ مہذب اور انسانی ہمدردی کا حامل ہو کے اصل مشن پر سختی سے کار بند ہے۔

 

پی ٹی آئی حکومت  کی طرف سے شروع کیا جانے والا احساس پروگرام آج ایشیا بھر میں سماجی تحفظ کے سب سے بڑے اور نمایاں پروگراموں میں سے ایک ہے۔ اس کے دوسرے مرحلے میں ہم معاشرے کے 80 لاکھ غریب ترین شہریوں کو سماجی تحفظ فراہم کرنے کا عزم رکھتے ہیں۔

 

ہم نے صحت کے شعبہ میں اصلاحات  کے حوالے سے یونیورسل ہیلتھ کوریج کو اپنی ترجیح بنایا ہے۔ ہم ''احساس سہولت پروگرام''  کے تحت ابتدائی طور پر خط غربت سے نیچنے زندگی بسر کرنے والے خاندانوں کو مفت ہیلتھ انشورنس فراہم کرنا چاہتے ہیں اور اس کے بعد ان صوبوں میں جہاں تحریکِ انصاف کی حکومت ہے کے تمام خاندانوں کو یہ سہولت دیں گے ۔

 

 ہمارا '' 10 بلین ٹری سونامی منصوبہ'' سے ماحولیاتی انحطاط کی روک تھام اور حیاتیاتی تنوع کے نقصانات کم کرنے کے عزم کا عکاس ہے ۔ ہم اس کرہ ارض کو بچانے میں اپنا حصہ ڈالنے اور اس ضمن میں زیادہ کردار ادا کرنے کے ساتھ ساتھ صدیوں سے نظر انداز ماحولیاتی شعبہ کی مدد کیلئے بھی تیار ہیں۔

 

پاکستان نے ابھرتے ہوئے عالمی اور علاقائی ماحول کے تناظر میں اپنی ترجیحات کو جیوپولٹیکس سے جیو اکنامکس میں از سر نو متعین کیا ہے۔

 

چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) بی آر آئی کا فلیگ شپ منصوبہ ہے جو اقتصادی ہم آہنگی اور علاقائی رابطوں پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے پاکستان کی اس جیواکنامک ترجیح کی ہماری کاوشوں کو تقویت دیتا ہے۔ 

 

اس کے علاوہ  صدر شی جن پنگ کے ''گرین  چائنا وژن '' سے ہم آہنگ میری حکومت کا  ''گرین وژن '' سی پیک کو پاکستان کی ترجیح کے طور پر گرین سی پیک میں تبدیل کر رہا ہے۔

 

چین کے ساتھ ہماری پائیدار دوستی اور سی پیک اپنے اور دوسروں کیلئے امن  اور خطے و دنیا کیلئے  مشترکہ خوشحالی اور ترقی کے ہمارے وژن کو تقویت دیتے ہیں ۔

 

پاکستان اور چین آہنی برادرز ہیں اور ہم اپنے بنیادی مفادات کے امور میں ایک دوسرے کی حمایت کرتے ہیں۔

 

عالمی اور علاقائی سطح پر پیچیدہ اور عمیق تبدیلیوں کے دور میں ہماری سدا بہار تزویراتی معاون شراکت داری امن ، ترقی اور خوشحالی کیلئے ایک مضبوط بنیاد ہے۔

 

یہ سال پاکستان اور چین کے درمیان سفارتی تعلقات کے قیام کی 70 ویں سالگرہ کا موقع بھی ہے ۔ دونوں ممالک اس تاریخی سنگ میل کو شایان شان طریقے سے منا رہے ہیں ۔ مجھے یقین ہے کہ سال 2021  ہماری آزمودہ دوستی کو نئی قوت اور جذبہ بخشے گا ۔ 

 

معزز خواتین و حضرات

 

ہمیں امن و ترقی ، اپنے عوام کی بہبود اور پوری انسانیت کیلئے مشترکہ مستقبل کی برادری کی تشکیل جیسے باوقار مقاصد کو آگے بڑھانے کیلئے مل کر کام کرنا ہوگا۔ 

 

شکریہ