وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں ٹیکس کے نظام میں اصلاحات کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس

September 14, 2020

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں ٹیکس کے نظام میں اصلاحات کے حوالے سے اعلیٰ سطح اجلاس

 

اجلاس میں وزیرِ اطلاعات شبلی فراز، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، معاونین خصوصی لیفٹنٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ، ڈاکٹر شہباز گل، چئیرمین سرمایہ کاری بورڈ ، سابق وزیرِ خزانہ ڈاکٹر حفیظ پاشا، چئیرمین ایف بی آر و دیگر سینیئر افسران شریک

 

اجلاس کو ٹیکس نظام میں اصلاحات، نظام میں موجود خرابیوں کو دور کرنے،   مراعات یافتہ طبقات   کی جانب سے ٹیکس نظام کے غلط استعمال کو روکنے، ٹیکس کی چوری اور  ٹیکس اہلکاروں کی بدعنوانیوں  کے خاتمےاور نظام میں شفافیت کو یقینی بنانے کے  حوالے سے  مختلف تجاویز وزیرِ اعظم کو پیش کی گئیں۔ 

 

وزیرِ اعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  منصفانہ اور شفاف ٹیکس نظام   موثر  طرزحکومت  اور عوام کی فلاح و بہبود کو یقینی بنانے  کے حوالے  حکومتی استعداد کو بہتر بنانے میں کلیدی اہمیت کا حامل ہے۔ انہو ں نے کہا کہ ماضی میں حکمران طبقے نے جہاں اپنے مفادات  کے لئے ملکی وسائل کا غلط استعمال کیا وہاں ٹیکس کے نظام  میں وقتاً فوقتاً  اس انداز میں تبدیلیاں اور ردوبدل کیا جاتا رہا ہے  کہ ٹیکس کا سارا بوجھ عام عوام اور چھوٹے تاجروں و کاروباری برادری پر پڑتا رہا ہے جس سے چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار اور خصوصاً عام آدمی متاثر ہوا ہے۔وزیرِ اعظم نے کہا کہ ٹیکس نظام میں اصلاحات حکومت کی اولین ترجیح ہے تاکہ اس نظام کو منصفانہ اور شفاف بنایا جا سکے۔ 

 وزیرِ اعظم نے ٹیکس نظام میں اصلاحات کے حوالے سے پیش کی جانے والی تجاویز کا خیر مقدم کرتے ہوئے وزیر صنعت و پیداوار، مشیر خزانہ اور مشیر تجارت کو ہدایت کی کہ ان تجاویز کا تفصیلی جائزہ لیا جائے تاکہ قابل عمل تجاویز پر عمل درآمد کیا جا سکے