کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے : وزیر اعظم عمران خان کی عوام سے اپیل کورونا کی تیسری لہر کا مقابلہ کرنے کے ضمن میں سب سے موثر حکمت عملی وباء کو تیزی سے پھیلانے والےمحرکات پر قابو پانا اور ماسک کا استعمال ہے: وزیرِ اعظم

March 31, 2021

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل کوارڈینیشن کمیٹی برائے کوویڈ کا اجلاس وزیر اعظم کو ملک میں کورونا وبا کے پھیلاؤ کی صورتحال، مثبت کیسز کی شرح، کوویڈ  ویکسین کی دستیابی اور عوام کو فراہمی  اور مستقبل قریب میں ویکسین کی وافر دستیابی کو یقینی بنانے کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات پر تفصیلی بریفنگ خطے میں کورونا کی تیسری لہر کے بعد کی صورتحال پر بھی بریفنگ وزیر اعظم نے اس  امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ عوام میں کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کے حوالے سے غفلت کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لئے بھرپور آگاہی مہم شروع کی جائے۔

وزیراعظم نے کہا کہ دنیا بھر کے تجربے سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ کورونا وبا کی روک تھام کے   حوالے سے  ماسک کا استعمال سب سے موثر رہا ہے۔

 

وزیرِ اعظم نے کہا کہ کورونا کی تیسری لہر سے نمٹنے  اور وباء کی روک تھام کے حوالے سے حکمت عملی ملکی معاشی حالات اور خصوصا عام عوام کی مشکلات کو سامنے رکھ کر ترتیب دینی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وباء سے سب سے زیادہ غریب عوام متاثر ہوتی ہے۔ ہماری تمام تر حکمت عملی کا محور غریب عوام کو ریلیف فراہم کرنا اور ان کو وبا کے منفی اثرات سے بچانا ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ ہم نے توازن کی پالیسی اختیار کرنی ہے تاکہ جہاں وبا کو موثر طور پر روکا جا سکے وہاں غریب آدمی اور ملکی معیشت کم سے کم متاثر ہو ۔ وزیراعظم نے کہا کہ کورونا کی گذشتہ لہر کے نتیجے میں محض پاکستان میں دو کروڑ افراد کا روزگار متاثر ہوا۔انہوں نے کہا کہ احساس ایمرجنسی کیش پروگرام کی وجہ سے  غریب طبقات کو موثر ریلیف فراہم کیا گیا۔ صوبائی وزرائے اعلیٰ اور حکام نے وزیرِ اعظم کو اپنے متعلقہ صوبوں کی صورتحال سے آگاہ کیا۔ وزیرِ اعظم نے تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی کہ کورونا ایس اوپیز پر عمل درآمد کے حوالے سے جہاں عوام کو متحرک کیا جائے وہاں ضلعی انتظامیہ کے موثر کردار کو بھی یقینی بنایا جائے