وزیر اعظم کی زیر صدارت گلگت میں اعلیٰ سطحی جلاس۔ 

November 01, 2019

گلگت ، یکم نومبر 2019

 

وزیر اعظم کی زیر صدارت گلگت میں اعلیٰ سطحی جلاس۔ 

اجلاس میں وفاقی وزیر برائے امور کشمیر اور گلگت بلتستان علی امین گنڈاپور، گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین مقپون، وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمان، سینیٹر فیصل جاوید، گلگت بلتستان اسمبلی کے اراکین اور حکومت کے سینئر افسران شریک۔

 چیف سیکریٹری گلگت بلتستان نے وزیراعظم کو گلگت بلتستان کے انتظامی امور، ترقیاتی منصوبوں اور سیکورٹی صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی۔ 

وزیر اعظم کو گلگت بلتستان میں جاری ترقیاتی منصوبوں بشمول سڑکوں کی تعمیر، صحت کی سہولیات، پن بجلی کے منصوبوں، شجرکاری اور سیاحت کے فروغ کے لیے جاری اقدامات سے آگاہ کیا گیا۔

 وزیر اعظم نے کہاکہ گلگت بلتستان کو قدرت نے بے پناہ وسائل سے نوازا ہے۔ اس علاقے میں سیاحت کے فروغ کے لیے بیش بہا مواقع موجود ہیں جن کو بروئےکار لاکراس خطے کی ترقی ممکن ہو سکے گی۔ 

وزیر اعظم نے کہا کہ گلگت بلتستان حکومت مزید چھوٹے پن بجلی گھر قائم کرنے کے حوالے سے منصوبہ بندی کرے جس میں وفاقی حکومت بھی مدد کرے گی۔ 

سی پیک منصوبوں میں شامل گلگت-شندور-چترال روڈ، ١٠٠ میگاواٹ گلگت پن بجلی منصوبہ اور ٨٠ میگاواٹ پھنڈر پن بجلی منصوبہ پر بھی بریفنگ دی گئ۔

 وزیر اعظم نے کہا کہ سی پیک منصوبوں کی بدولت اس خطے کی ترقی دیدنی ہوگی۔

 وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ سرسبز پاکستان پروگرام کے تحت گلگت بلتستان میں ١٧٠ ملین پودے لگائے جائیں گے۔ 

وزیر اعظم نے وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پور کو ہدایت کی کہ وہ گلگت بلتستان میں جاری ترقیاتی منصوبوں میں درپیش مسائل کو متعلقہ اداروں کے ساتھ مل کر جلد حل کریں۔ 

وزیر اعظم نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ وفاقی حکومت ہر ممکن طریقے سے گلگت بل بلتستان حکومت کی مدد کرے گی۔ گلگت بلتستان کی غیور عوام کا بھی پاکستان پر اتنا ہی حق ہے جتنا باقی صوبوں کا ہے