وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت صوبہ پنجاب میں امن و امان کی صورتحال کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس

October 28, 2019

لاہور: 28 اکتوبر 2019

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت صوبہ پنجاب میں امن و امان کی صورتحال کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس

اجلاس میں وزیرِ داخلہ برگیڈئیر (ر) اعجاز احمد شاہ، وزیر تعلیم شفقت محمود، معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان،  وزیرِ اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار،  وزیر قانون پنجاب محمد بشارت راجا،  وزیر بہبود آبادی، محمد ہاشم ڈوگر، وزیر کھیل محمد تیمور خان،  لیبر منسٹر انصر  مجید خان، چیف سیکرٹری پنجاب یوسف نسیم کھوکھر اور دیگر سینئر افسران شریک ۔

آئ جی پنجاب کی صوبہ بھر میں جرائم کی روک تھام،  بڑے جرائم  میں ملوث عناصر کے خلاف کارروائی،  تھانہ کلچر میں تبدیلی، پولیس اہلکاروں کی پیشہ ورانہ تربیت، اچھی شہرت کے حامل اہلکاروں کی حوصلہ افزائ، قوانین میں ترامیم اور جرائم پیشہ عناصر کے خلاف عوام میں آگاہی مہم کے حوالے تجاویز اور اقدامات پر شرکاء کو بریفنگ دی۔


وزیراعظم عمران خان کو قصور اور چونیاں میں بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات اور چائلڈ پورنوگرافی میں ملوث عناصر کے خلاف 6 ماہ کے اندر ایک مربوط حکمت عملی کے تحت واضح ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے آگاہ کیا گیا ۔

وزیراعظم عمران خان نے قصور اور چونیاں میں بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات پر بات کرتے ہوئے کہ ان واقعات کا سن کر ان کو شدید صدمہ ہوا  ہے ۔ اس جرم کی وجہ سے اللہ کا عذاب آتا ہے۔

وزیراعظم نے وزیر اعلی پنجاب اورمتعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ قصور، چونیاں اور دوسرے متاثرہ علاقوں کا دورہ کرکے وہاں علماء،  صاحب حیثیت افراد، اسکولوں کے اساتذہ اور والدین سے ملاقات کرکے ان میں بچوں کی اس جرم کا شکار ہونے سے بچاو کی مناسب  تربیت، اور اس میں ملوث عناصر کی نشاندہی کی آگاہی اجاگر کریں۔
وزیراعظم نے کہا کہ اس ضمن میں ایک بھرپور عوامی آگاہی مہم کا آغاز بھی کیا جائے کیونکہ اس جرم کا مقابلہ حکومت اور عوام مل کر کر سکتے ہیں۔
وزیراعظم نے بڑے جرائم پیشہ عناصر کے خلاف بھرپور ایکشن لینے کی ہدایت کی اور کہا کہ اس حوالے سے اگر افسران پر کوئ دباؤ آئے تو وہ ان کے ساتھ کھڑے ہوں گے ۔