وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت معاشی ٹیم کا اجلاس۔

October 27, 2019

وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت معاشی ٹیم کا اجلاس۔

اجلاس میں وفاقی وزراء مخدوم خسرو بختیار، علی زیدی ، عمر ایوب، حماد اظہر، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، مشیر اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین،  معاونین خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان،  یوسف بیگ مرزا، شوکت ترین،  چیرمین ایف بی آر شبر زیدی،  چیرمین سرمایہ کاری بورڈ اور سینئر افسران بھی موجود۔

وزیر اعظم نے عالمی بینک کی طرف سے پاکستان کی کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے کی رینکنگ میں اضافے پر متعلقہ اداروں اور ان کے اہلکاروں کو مبارکباد دی۔ یہ پاکستان کے لیے بڑی کامیابی ہے۔

معاشی ٹیم کے ساتھ متواتر اجلاس کا مقصد معیشت کے پہئیے کو مزید تیز کرنا ہے۔ وزیر اعظم

معاشی اعشاریے بہتری کی طرف جا رہے ہیں: وزیرِ اعظم  

تعمیرات اور چھوٹے کاروبار کو ترویج دینا اب معاشی ٹیم کا مشن ہونا چاہیے تاکہ روزگار کے مواقع ملیں اور معیشت کا پہیہ چلے۔


اجلاس میں اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے بریفنگ دی کہ بینکنگ کورٹس میں کل 46,940 کیسز زیر التوا ہیں جن  کے  حل کے لیے قوانین میں اصلاحات کی ضرورت ہے۔

اجلاس میں چھوٹی اور درمیانی صنعتوں  (ایس ایم  ایز) کے فروغ کے لیے آگاہ کیا گیا کہ اسمیڈا کے لیے ایک متحرک اورماہرافراد پر مشتمل بورڈ آف گورنرز قائم کیا جا رہا ہے۔ اسمیڈا کے سی ای او کی تعیناتی دسمبر تک ہو جائے گی اور 3 سالہ اسٹریٹجی منظور کی جائے گی۔

غیر ملکی سرمایہ کاروں کے ساتھ ساتھ ملکی سرمایہ کاروں کو بھی سہولیات دینا ہماری ترجیح ہے۔ وزیر اعظم

روپے کی قدر مستحکم ہوگئی ہے اور اسٹاک مارکیٹ کے اعشاریے اوپر جا رہے ہیں۔  وزیر اعظم

بیرون ملک  مقیم پاکستانیوں کے لیے ترسیلات میں آسانیاں پیدا کی جائیں۔  وزیر اعظم

وزیرِ اعظم کی ہدایت پر ایف ڈبلیو او نے تاجروں کی سہولت کے لئے  ایم –نائن  پر ایکسل لوڈ کی عملداری ایک سال کے لئے موخر کر دی۔ یہ فیصلہ تاجر برادری کی درخواست پر لیا گیا۔