وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس

October 02, 2019

اسلام آباد، 02اکتوبر2019:


٭ وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس
٭ اجلاس میں وزیرِ منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، وزیر توانائی عمر ایوب خان، وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی چوہدری فواد احمد، وزیرِ ریلوے شیخ رشید احمد،  وزیر بحری امور علی زیدی، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، معاون خصوصی برائے پٹرولیم ندیم بابر، چئیرمین سرمایہ کاری بورڈ زبیر گیلانی ودیگر سینئر افسران شریک
٭ اجلاس میں سی پیک کے تحت مختلف منصوبوں پر پیش رفت کے ساتھ ساتھ معیشت کے دیگر اہم شعبہ جات میں دوست ملک چین سے دوطرفہ تعاون کو فروغ دینے پر تفصیلی گفتگو
٭ وزیرِ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے ڈیجیٹل پے منٹ، بیٹری سٹوریج ریسرچ، زرعی آلات کی مینوفیکچرنگ، ڈرون ٹیکنالوجی، سولر سیل مینوفیکچرنگ اور نباتات و حیوانات سے متعلق ریسرچ جیسے  اہم شعبوں کی نشاندہی کرتے ہوئے بتایا کہ جدید ٹیکنالوجی کے فروغ اور معیشت کے اہم شعبوں کی ترقی کے لئے پاک چین دوطرفہ تعاون کو مزید وسعت دینے کا بے شمار پوٹینشل موجود ہے۔
٭  وزیرِ منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار نے اجلاس کو سی پیک کے تحت جاری منصوبوں پر پیش رفت اور مختلف منصوبوں پر عمل درآمدکی رفتار کو تیز کرنے کے حوالے سے اقدامات سے آگاہ کیا۔ 
٭  وزیرِ ریلوے شیخ رشید احمد نے سی پیک کے اہم منصوبے مین لائن -ون(ML-1) پر اب تک کی پیش رفت اور منصوبے کے ممکنہ ثمرات سے شرکاء کو آگاہ کیا۔
٭ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا کہ سی پیک منصوبہ پاک چین دوستی کامظہر ہے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک منصوبوں کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنا اور ان منصوبوں کی بروقت تکمیل حکومت کی اولین ترجیح  ہے۔ وزیرِ اعظم نے امید ظاہر کی کہ ان کا آئندہ چند روز میں چین کا دورہ اور چینی قیادت سے ملاقاتیں پاک چین دوستی کو مزید مستحکم کرنے اور دوطرفہ تعاون کو فروغ دینے میں ممدومعاون ثابت ہوں گی۔