وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت انضمام شدہ علاقوں (سابقہ فاٹا) میں ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت کے حوالے سے جائزہ اجلاس

July 15, 2019

 
اسلام آباد،15جولائی2019:
٭ وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت انضمام شدہ علاقوں (سابقہ فاٹا) میں ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت کے حوالے سے جائزہ اجلاس
٭ اجلاس میں قائدِ ایوان سینٹ شبلی فراز، وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان، سینیٹر ہدایت اللہ،  سینیٹر اورنگ زیب خان،  سینیٹر مرزا محمد آفریدی،  سینیٹر مومن آفریدی  اورسینیٹر سجاد طوری شریک
٭ اجلاس میں انضمام شدہ علاقوں میں جاری ترقیاتی منصوبوں  اور انضمام کے بعد انتظامی امور پر پیش رفت کا جائزہ
٭ موجودہ حکومت نے انضمام شدہ علاقوں کی تعمیر و ترقی کے لئے جس عزم کا مظاہرہ کیا ہے اور جتنے فنڈز فراہم کیے ہیں اس پر قبائلی علاقوں کی عوام حکومت کی مشکور ہے: وفد کی وزیرِ اعظم سے گفتگو
٭  انضمام شدہ علاقوں میں ٹیکسوں کے نفاذ کے معاملے میں علاقے کی عوام کی مشکلات کو مد نظر رکھا جائے: وفد کی درخواست
٭ اجلاس میں انضمام شدہ علاقوں سے تعلق رکھنے والے  سینیٹرز نے عوام کو درپیش مختلف مسائل سے بھی وزیرِ اعظم کو آگاہ کیا
٭ہر طرح کے کاروبار کا باقاعدہ اندراج اور ٹیکس نیٹ کی توسیع  اقتصادی ترقی کے لئے ازحد ضروری ہے تاہم انضمام شدہ علاقوں میں ٹیکس کی شرح کے تعین میں علاقے کے عوام کی مشکلات اور زمینی حقائق کو مدنظر رکھا جائے گا: وزیرِ اعظم
٭  قومی آمدن کا تقریباً نصف حصہ قرضوں اور سود کی ادائیگی میں خرچ ہو جاتا ہے، معاشی استحکام کے لئے ضروری ہے کہ معاشی سرگرمیوں کو باقاعدہ  دستاویزی شکل دی جائے اورٹیکس کے دائرہ کو بڑھا یا جائے: وزیرِ اعظم
٭ انضمام شدہ علاقوں کی عوام نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں اور مشکلات اٹھائی ہیں۔ ان علاقوں کی تعمیر و ترقی اور نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی اولین ترجیح ہے: وزیرِ اعظم