انضمام شدہ علاقوں کے عوام کے ساتھ کیے گئے وعدوں کو پورا کیا جائے گا: وزیر اعظم

June 24, 2019

 
انضمام شدہ علاقوں کے عوام کے ساتھ کیے گئے وعدوں کو پورا کیا جائے گا: وزیر اعظم

وزیرِ اعظم عمران خان سے انضمام شدہ علاقوں (سابقہ فاٹا) سے تعلق رکھنے والے سینیٹرز اور اراکین قومی اسمبلی کی ملاقات

وفد میں سینیٹر ہدایت اللہ خان، سینیٹر مومن خان آفریدی، سینیٹرمرزا محمد آفریدی، سینیٹر سجاد حسین طوری، سینیٹر اورنگ زیب خان، سینیٹر ایوب آفریدی اور ممبران قومی اسمبلی گل داد خان، سجاد خان، وزیر مذہبی امور نورالحق قادری، محمد اقبال خان اور جواد حسین شامل

وزیر دفاع پرویز خٹک ،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، قائد ایوان سینیٹ سینیٹر شبلی فراز ، وزیرِاعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان، معاون خصؤصی نعیم الحق، معاون خصوصی افتخار درانی بھی ملاقات میں موجود

ملاقات میں انضمام شدہ علاقوں میں جاری ترقیاتی امور اور عوام کو درپیش مسائل پر تفصیلی گفتگو
※ شرکا سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا ملکی تاریخ میں پہلی دفعہ انضمام شدہ علاقوں کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے ترقیاتی منصوبوں کے لیے اس سال تراسی ارب روپے کا بجٹ مختص کیا ہے جو  عوام کو درپیش مسائل کے حل میں مددگار ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ انضمام شدہ علاقوں کے عوام نے بے شمار قربانیاں دی ہیں اور مشکلات اٹھائی ہیں۔ حکومت کو ان مشکلات کا مکمل ادراک ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ انضمام شدہ علاقوں کے عوام سے کیے گئے وعدوں کو پورا کیا جائے گا۔
وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ ترقیاتی منصوبوں پرعمل درآمد میں عوام کے نمائندوں کو شامل کیا جائے اور عوام کی ترجیحات کو مدنظر رکھا جائے ۔
※ سینیٹر اور اراکین قومی اسمبلی نے انضمام شدہ علاقوں میں فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کے نفاذ کے مسئلے پر بھی تحفظات سے آگاہ کیا۔ وزیر اعظم نے اراکین کو یقین دلایا کہ ان کے تحفظات پر  غور کیا جائے گا
وزیر اعلی خیبر پختونخواہ نے انضمام شدہ علاقوں میں مختلف ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے وزیر اعظم کو بریف کیا ۔