وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت خیبر پختونخواہ سے متعلقہ توانائی سے متعلق مختلف ایشوز کے حوالے سے اہم اجلاس

January 25, 2019


اسلام آباد، 25 جنوری2019:


وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت خیبر پختونخواہ سے متعلقہ توانائی سے متعلق مختلف ایشوز کے حوالے سے اہم اجلاس 

※ اجلاس میں وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر برائے پٹرولیم غلام سرور خان، وزیر برائے توانائی عمر ایوب خان ، وزیر اعلی خیبر پختونخواہ محمود خان، چیئرمین ٹاسک فورس برائے انرجی ندیم بابر، مشیر وزیر اعلی خیبر پختونخواہ حمایت اللہ  اور سینئر افسران شریک

اجلاس میں صوبہ خیبر پختونخواہ میں تیل اور گیس کی پیداوار، بجلی بنانے کے مختلف منصوبوں پر پیش رفت اور انرجی سے متعلقہ مختلف ایشوز پر بات چیت

این ٹی ڈی سی، سی پی پی اے اور انرجی سے متعلقہ تمام وفاقی اداروں میں صوبائی  نمائندگی یقینی بنائی جائے گی: اجلاس میں فیصلہ

صوبوں کے درمیان نیٹ ہائیڈل پرافٹس اور اے جی این قاضی فارمولے سے متعلقہ معاملات کے حل کے لئے کمیٹی کے قیام کا فیصلہ۔ کمیٹی آئندہ ایک ہفتے میں مستقبل کے لائحہ عمل کے لئے سفارشات پیش کرے گی
صوبہ پختونخواہ میں پیدا ہونے والی بجلی کی دیگر صوبوں اور ملک کے دیگر حصوں میں فروخت کے لئے ویہلنگ (wheeling) کی سہولت فراہم کرنے میں معاونت کرنے کا فیصلہ۔
صوبائی حکومت کی جانب سے مقامی طور پر پیدا ہونے والی گیس کی چوری کی روک تھام کے لئے ایک ماہ میں لائحہ عمل پیش کیا جائے گا۔
اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تیل اور گیس کی پیداوار سے حاصل ہونے والی آمدنی سے ان علاقوں کوکہ جن سے یہ پیداوار حاصل ہوئی ہے  مناسب حصہ دینے کو یقینی بنایا جائے گا۔ 
وزیرِ توانائی کی جانب سے پیسکو ریجن میں بجلی کے ترسیلی نظام کی تنظیم نو کرنے اور اسے جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کرنے کے لئے کیے جانے والے اقدامات پر بریفنگ
اجلاس میں پیسکو کے بورڈ کی تنظیم نو کرنے کا فیصلہ
وزیرِ اعظم کو مائیکرو ہائیڈل پراجیکٹ کی تکمیل اور اس سلسلے میں پیش رفت پر بھی بریفنگ
آئندہ تین ماہ میں مکمل طور پر تیار 356مائیکرو ہائیڈل پراجیکٹ کمیونٹی کے حوالے کر دیے جائیں گے: وزیرِ اعظم کو بریفنگ
انرجی پراجیکٹس کے قیام کے لئے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے قانون کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔ 
چئیرمین انرجی ٹاسک فورس ندیم بابر کی جانب سے ملکی سطح پر توانائی کی صورتحال کے حوالے سے بھی بریفنگ
ملکی ترقی اور شرح نمو کو مد نظر رکھتے ہوئے آئندہ پچیس سالوں کے لئے انرجی کی طلب و رسد کا تخمینہ تیار کیا جا چکا ہے جو جلد وزیرِ اعظم کو پیش کر دیا جائے گا۔ 
آئندہ دس سالوں میں انرجی کے تمام پراجیکٹ قابل تجدید توانائی پر مبنی ہوں گے: وزیرِ اعظم کو بریفنگ