وزیرِ اعظم عمران خان سے فاٹا سے تعلق رکھنے والے ممبران قومی اسمبلی کے وفد کی ملاقات

October 02, 2018

اسلام آباد، 02اکتوبر2018:
 
٭ وزیرِ اعظم عمران خان سے فاٹا سے تعلق رکھنے والے ممبران قومی اسمبلی کے وفد کی ملاقات
٭  ملاقات میں گورنر خیبر پختونخواہ شاہ فرمان، وزیر برائے مذہبی امور پیر نور الحق قادری، وزیرِ اعظم کے مشیر شہزاد ارباب،  ممبران قومی اسمبلی گل داد خان، گل ظفر خان، ساجد خان، محمد اقبال آفریدی، منیر خان اورکزئی، ساجد حسین طوری، جواد حسین، محمد جمال الدین، محمد علی  اور عبدالشکور شریک
٭ فاٹا انضمام، ترقیاتی منصوبوں اور قبائلی علاقہ جات کی عوام کو درپیش مسائل پر گفتگو
٭ گذشتہ کئی دہائیوں سے قبائلی علاقہ جات کے محب الوطن عوام نے بے شمار مسائل اور مشکلات برداشت کی ہیں۔ قبائلی علاقہ جات کی تعمیر و ترقی اور عوام کی زندگیوں میں واضح تبدیلی پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے: وزیرِ اعظم
٭ قبائلی علاقہ جات میں تعمیر و ترقی، صحت، تعلیم سمیت ملک کے دیگر حصوں میں موجود سہولتوں کی فراہمی اور نوجوانوں کے لئے روز گار کی فراہمی جیسے اہم ایشوز کے حل کے لئے ہر ممکنہ کوشش کی جائے گی: وزیرِ اعظم
٭ قبائلی علاقہ جات میں پائے جانے والے معدنیات پر قبائلی عوام کا حق ہے۔ یہ معدنی دولت قبائلی علاقہ جات کی بہتری اور تعمیر و ترقی کے لئے خرچ کی جانی چاہیے۔ اس ضمن میں کسی کو قبائلی عوام کے حق کا استحصال نہیں کرنے دیا جائے گا: وزیرِ اعظم
٭  قبائلی علاقہ جات میں عوام سے سرکاری افسران کے نامناسب رویے کی شکایت پر وزیرِ اعظم کا اظہار ناپسندیدگی۔
٭ سرکاری افسران اپنا قبلہ درست کریں اور عوام کے لئے مشکلات کا باعث نہ بنیں: وزیرِ اعظم کی ہدایت     
٭ حکومت پوری کوشش کر رہی ہے کہ انضمام کا عمل بغیر کسی تاخیر و رکاوٹ  جلد از جلد مکمل کیا جائے: وزیرِ اعظم
٭فاٹا کے لئے مختص سالانہ ترقیاتی فنڈز کی بروقت فراہمی کے ساتھ ساتھ وفاقی حکومت تمام صوبائی حکومتوں کی معاونت سے اس بات کی بھرپور کوشش کرے گی کہ این ایف سی ایوارڈ کی تقسیم میں قبائلی عوام کے ساتھ کیے گئے وعدوں کو پورا کیا جائے۔
٭  حکومت کی بھرپور کوشش ہے کہ فاٹا میں جلد از جلد لوکل گورنمنٹ کا نظام عمل میں آئے تاکہ عوامی سطح پر منتخب نمائندے اپنے علاقوں کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے فراہم کردہ فنڈ کو برؤے کار لا سکیں: وزیرِ اعظم