وزیراعظم جناب عمران خان کا یوم عاشوراء محرم الحرام ۰۴۴۱ھ/۸۱۰۲ء کے موقع پر قوم کے نام پیغام

وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان
جناب عمران خان کا
  یوم عاشوراء  محرم الحرام  ۰۴۴۱ھ/۸۱۰۲ء  کے موقع پر قوم کے نام پیغام 
 
 بِسْمِ اللّٰہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ  ط
 
السلام علیکم ورحمۃ اللہ و برکاتہ 
 
عزیز ہم وطنو!
 
آج حرمت و عظمت والے مہینہ محرم الحرام کی دس تاریخ ہے۔اس دن کو تاریخ اسلام نے یوم عاشوراء کے نام سے موسوم کیا ہے۔ یہ دن ہمیں اس عظیم قربانی کی یاد دلاتا ہے جو نواسہ رسول حضرت امام حسینؓ اور ان کے ساتھیوں نے دین کی حفاظت و حرمت  کے لئے پیش کی۔ 
  
واقعہ کربلا ہمیں اعلیٰ مقاصد کے حصول کی خاطر ایثار و قربانی کا درس دیتا ہے- استقامت حق کا حصول ہی وہ مشن ہے جس کے لئے کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرنا چاہیئے یہی وہ عمل ہے جسے امام حسینؓ کے حوالے سے تاریخ نے اسوہ شبیری کے نام سے موسوم کیا ہے۔ جس میں ہمیں حق کی سربلندی کے لئے ڈٹ جانے کا پیغام ملتا ہے۔آج کا دِن ہمیں نواسہ رسول A018; اور جگر گوشہ بتول کے عظیم افکار و اعمال کی یاد دلاتا ہے۔ 
 
عزیز ہم وطنو!
 
دسویں محرم کا دن ہمیں حق وباطل کے اس معرکے کی یاد دلاتا ہے جو دس محرم کو کربلا کے میدان میں پیش آیا۔ حق و باطل کی لڑائی اس دور میں بھی جاری ہے۔لیکن حضرت امام حسین ؓ نے اپنی لازوال قربانی سے یہ ثابت کیا ہے کہ باطل جب بھی حق سے ٹکرایا ہے نیست و نابود ہوا ہے۔ ثابت قدمی اور استقامت کی یہی مثال ہمارے لیے مشعل راہ ہے۔ آج کے دن ہمیں اُسوہ حسینی کو نہ صرف یاد رکھنا ہے بلکہ خود کو اسلامی تعلیمات کے مطابق ڈھال لینے کے لئے سر گرم عمل ہونے کا پختہ عزم بھی کرنا ہے۔
 
وطن عزیز کے حالات کو دیکھتے ہوئے آج ہمیں متحد و منظم ہونے اور ایثار وقربانی کے جذبے کو فروغ دینے کی ضرورت پہلے سے کہیں زیادہ ہے تاکہ جہاں ہم دشمنان ملک و ملت کے نا پاک عزائم کو شکست دے سکیں وہاں ملک و قوم کی بہتری کے لئے عملی اقدامات اٹھانے میں ثابت قدم رہ سکیں۔ یہی وقت کی ضرورت ہے اور اسی میں ہم سب کی بقا ہے۔اللہ تعالیٰ ہم سب کا حامی و ناصر ہو۔  آمین۔
      پاکستان پائندہ باد